Please wait...
HomeForumInternationalUrduاردو ادب
Topic Rating:

Jump to
Members LoungeYour StatsSuccess StoriesPayment ProofsMember IntroductionGeneral TalkForo en EspañolCharla GeneralSoporte General y PagosInternationalPortugueseItalianFrenchGermanHindiUrduFilipinoIndonesianArabicRomanianTurkishRussianBulgarianHungarianPolishEx-Yugoslavia
اردو ادب

Locked

#1 by blueuld » Tue Feb 10, 2015 11:57

سلام دوستو، ھمارےاردو فورم میں اگر اردو شاعری اور لطیف ادب کی محفل سجے تو کیسا رہے گا؟
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#2 by diyamughal » Wed Feb 11, 2015 00:04

blueuld wrote: سلام دوستو، ھمارےاردو فورم میں اگر اردو شاعری اور لطیف ادب کی محفل سجے تو کیسا رہے گا؟

good idea
diyamughal
Posts140
Member Since25 Oct 2014
Last Visit5 Jul 2018
Likes Given45
Likes Received31/25

#3 by blueuld » Wed Feb 11, 2015 00:18

ﮦ ﺟﻮ ﭘﺮﮮ ﭘﺮﮮ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﮨﯿﮟ
ﻭﮦ ﺟﻮ ﺍﻥ ﺳﮯ ﭘﺮﮮ ﺑﯿﭩﮭﮯﮨﯿﮟ
ﻭﮦ ﯾﮧ ﺳﻤﺠﮫ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﮨﯿﮟ
ﮨﻢ ﺍﻥ ﭘﮧ ﻣﺮﮮ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﮨﯿﮟ
ﮨﻢ ﮐﻮﺋﯽ ﺍﻥ ﭘﮧ ﻣﺮﮮ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﮨﯿﮟ؟
ﺍﺭﮮ۔ ﮨﻢ ﺍﻥ ﭘﮧ ﻣﺮﮮ ﺑﯿﭩﮭﮯ
ﮨﯿﮟ ﺟﻮ ﺍﻥ ﺳﮯ ﭘﺮﮮ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﮨﯿﮟ
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#4 by blueuld » Wed Feb 11, 2015 03:26

"نسل انسانی آہستہ آہستہ مہذب ہو تی جا رہی تھی چنانچہ چھوٹی موٹی جھڑپوں کے بجائے باقائدہ جنگیں شروع ہوگئیں۔ سن4000 قبل مسیح کے لگ بھگ پہیہ ایجاد کیا گیا تاکہ حملہ کرنے اور بھاگنے میں آسانی رہے۔تانبے کا استعمال شروع ہوا۔ آئینہ بنایا گیا اور اس کے ساتھ میک اپ کا سامان بھی تاکہ خواتین ہر جگہ لیٹ پہنچ سکیں۔"
شفیق الرحمان۔کتاب:دجلہ
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#5 by diyamughal » Wed Feb 11, 2015 08:41

انا ___ جب بے تحاشہ هو
تو __ کیسے نا __ تماشہ هو
diyamughal
Posts140
Member Since25 Oct 2014
Last Visit5 Jul 2018
Likes Given45
Likes Received31/25

#6 by blueuld » Wed Feb 11, 2015 11:06

ﮐﺒﮭﯽ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﮮ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺧﯿﺎﻝ ﺁﺗﺎ ﮨﮯ
ﮐﮧ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺗﯿﺮﯼ ﺯﻟﻔﻮﮞ ﮐﯽ ﻧﺮﻡ ﭼﮭﺎﺅﮞ ﻣﯿﮟ
ﮔﺰﺭﻧﮯ ﭘﺎﺗﯽ ﺗﻮ ﺷﺎﺩﺍﺏ ﮨﻮ ﺑﮭﯽ ﺳﮑﺘﯽ ﺗﮭﯽ
ﯾﮧ ﺗﯿﺮﮔﯽ ﺟﻮ ﻣﯿﺮﯼ ﺯﯾﺴﺖ ﮐﺎ ﻣﻘﺪﺭ ﮨﮯ
ﺗﯿﺮﯼ ﻧﻈﺮ ﮐﯽ ﺷﻌﺎﺅﮞ ‌ ﻣﯿﮟ ﮐﮭﻮ ﺑﮭﯽ ﺳﮑﺘﯽ ﺗﮭﯽ
ﻋﺠﺐ ﻧﮧ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﮕﺎﻧﮧ ﺍﻟﻢ ﮨﻮ ﮐﺮ
ﺗﯿﺮﮮ ﺟﻤﺎﻝ ﮐﯽ ﺭﻋﻨﺎﺋﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﮐﮭﻮ ﺭﮨﺘﺎ
ﺗﯿﺮﺍ ﮔﺪﺍﺯ ﺑﺪﻥ ﺗﯿﺮﯼ ﻧﯿﻢ ﺑﺎﺯ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ
ﺍﻧﮩﯽ ﺣﺴﯿﻦ ﻓﺴﺎﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻣﺤﻮ ﺭﮨﺘﺎ
ﭘﮑﺎﺭﺗﯿﮟ ﺟﺐ ﻣﺠﮭﮯ ﺗﻠﺨﯿﺎﮞ ﺯﻣﺎﻧﮯ ﮐﯽ
ﺗﺮﮮ ﻟﺒﻮﮞ ﺳﮯ ﺣﻼﻭﺕ ﮐﮯ ﮔﮭﻮﻧﭧ ﭘﯽ ﻟﯿﺘﺎ
ﺣﯿﺎﺕ ﭼﯿﺨﺘﯽ ﭘﮭﺮﯼ ﺑﺮﮨﻨﮧ ﺳﺮ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﮟ
ﮔﮭﻨﯿﺮﯼ ﺯﻟﻔﻮﮞ ﮐﮯ ﺳﺎﺋﮯ ﻣﯿﮟ ﭼﮭﭗ ﮐﮯ ﺟﯽ ﻟﯿﺘﺎ
ﻣﮕﺮ ﯾﮧ ﻧﮧ ﮨﻮ ﺳﮑﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺏ ﯾﮧ ﻋﺎﻟﻢ ﺋﮯ
ﮐﮧ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﺮﺍ ﻏﻢ ﺗﺮﯼ ﺟﺴﺘﺠﻮ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ
ﮔﺰﺭ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ ﮐﭽﮫ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺟﯿﺴﮯ
ﺍﺳﮯ ﮐﺴﯽ ﮐﮯ ﺳﮩﺎﺭﮮ ﮐﯽ ﺁﺭﺯﻭ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ
ﺯﻣﺎﻧﮯ ﺑﮭﺮ ﮐﮯ ﺩﮐﮭﻮﮞ ﮐﻮ ﻟﮕﺎ ﭼﮑﺎ ﮨﻮﮞ ﮔﻠﮯ
ﮔﺰﺭ ﺭﮨﺎ ﮨﻮﮞ ﮐﭽﮫ ﺍﻧﺠﺎﻧﯽ ﺭﮦ ﮔﺰﺍﺭﻭﮞ ﺳﮯ
ﻣﮩﯿﺐ ﺳﺎﺋﮯ ﻣﯿﺮﯼ ﺳﻤﺖ ﺑﮍﮬﺘﮯ ﺁﺗﮯ ﮨﯿﮟ
ﺣﯿﺎﺕ ﻭ ﻣﻮﺕ ﮐﮯ ﭘﺮ ﮨﻮﻝ ﺧﺎﺭ ﺯﺍﺭﻭﮞ ﺳﮯ
ﻧﮧ ﮐﻮﺉ ﺟﺎﺩﮦ ﻣﻨﺰﻝ ﻧﮧ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﺎ ﺳﺮﺍﻍ
ﺑﮭﭩﮏ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ ﺧﻼﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﻣﯿﺮﯼ
ﺍﻧﮩﯽ ﺧﻼﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﺭﮦ ﺟﺎﺅﮞ ﮐﺎ ﮐﺒﮭﯽ ﮐﮭﻮ ﮐﺮ
ﻣﯿﮟ ﺟﺎﻧﺘﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﺮﯼ ﮨﻤﻨﻔﺲ ﻣﮕﺮ ﯾﻮﻧﮩﯽ
ﮐﺒﮭﯽ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﮮ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺧﯿﺎﻝ ﺁﺗﺎ ﮨﮯ
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#7 by blueuld » Wed Feb 11, 2015 11:16

ﻟﻔﻈﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺍﺗﺮ ﺁﻧﺎ ﺍﻥ ﭘﮭﻮﻝ ﺳﮯ ﮨﻮﻧﭩﻮﮞ ﮐﺎ
.
ﺍﮎ ﻟﻤﺲ ﮐﯽ ﺧﻮﺷﺒﻮ ﮐﺎ ﭘﻮﺭﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﺳﻤﻮ ﺟﺎﻧﺎ
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#8 by diyamughal » Wed Feb 11, 2015 23:50

blueuld wrote:
ﮐﺒﮭﯽ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﮮ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺧﯿﺎﻝ ﺁﺗﺎ ﮨﮯ
ﮐﮧ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺗﯿﺮﯼ ﺯﻟﻔﻮﮞ ﮐﯽ ﻧﺮﻡ ﭼﮭﺎﺅﮞ ﻣﯿﮟ
ﮔﺰﺭﻧﮯ ﭘﺎﺗﯽ ﺗﻮ ﺷﺎﺩﺍﺏ ﮨﻮ ﺑﮭﯽ ﺳﮑﺘﯽ ﺗﮭﯽ
ﯾﮧ ﺗﯿﺮﮔﯽ ﺟﻮ ﻣﯿﺮﯼ ﺯﯾﺴﺖ ﮐﺎ ﻣﻘﺪﺭ ﮨﮯ
ﺗﯿﺮﯼ ﻧﻈﺮ ﮐﯽ ﺷﻌﺎﺅﮞ ‌ ﻣﯿﮟ ﮐﮭﻮ ﺑﮭﯽ ﺳﮑﺘﯽ ﺗﮭﯽ
ﻋﺠﺐ ﻧﮧ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﮕﺎﻧﮧ ﺍﻟﻢ ﮨﻮ ﮐﺮ
ﺗﯿﺮﮮ ﺟﻤﺎﻝ ﮐﯽ ﺭﻋﻨﺎﺋﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﮐﮭﻮ ﺭﮨﺘﺎ
ﺗﯿﺮﺍ ﮔﺪﺍﺯ ﺑﺪﻥ ﺗﯿﺮﯼ ﻧﯿﻢ ﺑﺎﺯ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ
ﺍﻧﮩﯽ ﺣﺴﯿﻦ ﻓﺴﺎﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻣﺤﻮ ﺭﮨﺘﺎ
ﭘﮑﺎﺭﺗﯿﮟ ﺟﺐ ﻣﺠﮭﮯ ﺗﻠﺨﯿﺎﮞ ﺯﻣﺎﻧﮯ ﮐﯽ
ﺗﺮﮮ ﻟﺒﻮﮞ ﺳﮯ ﺣﻼﻭﺕ ﮐﮯ ﮔﮭﻮﻧﭧ ﭘﯽ ﻟﯿﺘﺎ
ﺣﯿﺎﺕ ﭼﯿﺨﺘﯽ ﭘﮭﺮﯼ ﺑﺮﮨﻨﮧ ﺳﺮ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﮟ
ﮔﮭﻨﯿﺮﯼ ﺯﻟﻔﻮﮞ ﮐﮯ ﺳﺎﺋﮯ ﻣﯿﮟ ﭼﮭﭗ ﮐﮯ ﺟﯽ ﻟﯿﺘﺎ
ﻣﮕﺮ ﯾﮧ ﻧﮧ ﮨﻮ ﺳﮑﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺏ ﯾﮧ ﻋﺎﻟﻢ ﺋﮯ
ﮐﮧ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﺮﺍ ﻏﻢ ﺗﺮﯼ ﺟﺴﺘﺠﻮ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ
ﮔﺰﺭ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ ﮐﭽﮫ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺟﯿﺴﮯ
ﺍﺳﮯ ﮐﺴﯽ ﮐﮯ ﺳﮩﺎﺭﮮ ﮐﯽ ﺁﺭﺯﻭ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ
ﺯﻣﺎﻧﮯ ﺑﮭﺮ ﮐﮯ ﺩﮐﮭﻮﮞ ﮐﻮ ﻟﮕﺎ ﭼﮑﺎ ﮨﻮﮞ ﮔﻠﮯ
ﮔﺰﺭ ﺭﮨﺎ ﮨﻮﮞ ﮐﭽﮫ ﺍﻧﺠﺎﻧﯽ ﺭﮦ ﮔﺰﺍﺭﻭﮞ ﺳﮯ
ﻣﮩﯿﺐ ﺳﺎﺋﮯ ﻣﯿﺮﯼ ﺳﻤﺖ ﺑﮍﮬﺘﮯ ﺁﺗﮯ ﮨﯿﮟ
ﺣﯿﺎﺕ ﻭ ﻣﻮﺕ ﮐﮯ ﭘﺮ ﮨﻮﻝ ﺧﺎﺭ ﺯﺍﺭﻭﮞ ﺳﮯ
ﻧﮧ ﮐﻮﺉ ﺟﺎﺩﮦ ﻣﻨﺰﻝ ﻧﮧ ﺭﻭﺷﻨﯽ ﮐﺎ ﺳﺮﺍﻍ
ﺑﮭﭩﮏ ﺭﮨﯽ ﮨﮯ ﺧﻼﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﻣﯿﺮﯼ
ﺍﻧﮩﯽ ﺧﻼﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﺭﮦ ﺟﺎﺅﮞ ﮐﺎ ﮐﺒﮭﯽ ﮐﮭﻮ ﮐﺮ
ﻣﯿﮟ ﺟﺎﻧﺘﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﺮﯼ ﮨﻤﻨﻔﺲ ﻣﮕﺮ ﯾﻮﻧﮩﯽ
ﮐﺒﮭﯽ ﮐﺒﮭﯽ ﻣﯿﺮﮮ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺧﯿﺎﻝ ﺁﺗﺎ ﮨﮯ
bht aala bht pasnd hy mjy
diyamughal
Posts140
Member Since25 Oct 2014
Last Visit5 Jul 2018
Likes Given45
Likes Received31/25

#9 by diyamughal » Wed Feb 11, 2015 23:54

color kesy change krty hn blueuld?
diyamughal
Posts140
Member Since25 Oct 2014
Last Visit5 Jul 2018
Likes Given45
Likes Received31/25

#10 by blueuld » Thu Feb 12, 2015 00:23

@diyamughal

Text likh kar select kraain jis ki colour change karna hai opar second last option color ka hota hai us mein se color select kar len. . Preview kar ke check bhi kar len phr post kar den. 8-)
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#11 by diyamughal » Thu Feb 12, 2015 00:27

blueuld wrote: @diyamughal

Text likh kar select kraain jis ki colour change karna hai opar second last option color ka hota hai us mein se color select kar len. . Preview kar ke check bhi kar len phr post kar den. 8-)
jesy ap ny hr rang use kiya
:)
diyamughal
Posts140
Member Since25 Oct 2014
Last Visit5 Jul 2018
Likes Given45
Likes Received31/25

#12 by diyamughal » Thu Feb 12, 2015 00:30


غمِ زِندگی!
تِری راہ میں،
شبِ آرزُو!
تِری چاہ میں ۔۔
جو اُجڑ گیا وہ بسا نہیں،
جو بِچھڑ گیا وہ مِلا نہیں ۔۔۔!!
diyamughal
Posts140
Member Since25 Oct 2014
Last Visit5 Jul 2018
Likes Given45
Likes Received31/25

#13 by blueuld » Thu Feb 12, 2015 00:51

diyamughal wrote:
غمِ زِندگی!
تِری راہ میں،
شبِ آرزُو!
تِری چاہ میں ۔۔
جو اُجڑ گیا وہ بسا نہیں،
جو بِچھڑ گیا وہ مِلا نہیں ۔۔۔!!

بہت خوب

ap font ka size bhi increase kar skti hain taky parhna asan rahy. color ke sath size ka button bhi hai. Aik ya do bar size increase kar den to parhna zayada asan ho jata hai.
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#14 by blueuld » Thu Feb 12, 2015 01:13

ﻣﺠﮭﮯ ﺍﺗﻨﺎ ﺗﻮ ﺳﻤﺠﮭﺎ ﺩﻭ
ﺍﮔﺮ ﺍﯾﺴﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﻣﻤﮑﻦ
ﺗﻮ ﻣﺠﮭﮑﻮ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺗﻮﮌﻭ
ﮐﮧ ﻣﯿﮟ ﯾﮑﺴﺮ ﺑﮑﮭﺮ ﺟﺎﺋﻮﮞ
ﺑﮭﭩﮑﻨﮯ ﺳﮯ ﺗﻮ ﺑﮩﺘﺮ ﮬﮯ
ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﭘﺎﺱ ﻣﺮ ﺟﺎﺋﻮﮞ۔ ۔ ۔
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#15 by obaidu827 » Thu Feb 12, 2015 23:22

tek rahe ga ge
i egree to you
obaidu827
Posts9
Member Since6 Mar 2014
Last Visit25 Jul 2015
Likes Given0
Likes Received1/1

#16 by blueuld » Fri Feb 13, 2015 00:14

obaidu827 wrote: tek rahe ga ge
i egree to you

پھر آپ بھی کچھ اپنی پسند شیر کریں۔
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#17 by diyamughal » Fri Feb 13, 2015 02:54

ﺣﺴﺪ ﺍﯾﮏ ﺯﮨﺮ ﮨﮯ
ﺟﺴﮯ ﺑﻨﺪﮦ ﺧﻮﺩ ﭘﯿﺘﺎ ﮨﮯ
ﺍﻭﺭ ﺗﻮﻗﻊ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﮐﮯ ﻣﺮﻧﮯ ﮐﯽ ﮐﺮﺗﺎ ﮨﮯ.
diyamughal
Posts140
Member Since25 Oct 2014
Last Visit5 Jul 2018
Likes Given45
Likes Received31/25

#18 by blueuld » Thu Feb 19, 2015 11:12

دنیا پکارتی تھی تو اٹھتے نہ تھے قدم
گونجی تیری صدا تو قدم رقص کر گئے
blueuld
Posts211
Member Since3 Jul 2014
Last Visit27 Oct 2017
Likes Given31
Likes Received119/73

#19 by rabbnawazkhan » Thu Feb 19, 2015 23:00

یہ بچہ کس کا بچہ ہے
یہ بچہ کالا کالا سا
یہ کالا سا مٹیالا سا
یہ بچہ بھوکا بھوکا سا
یہ بچہ سوکھا سوکھا سا
یہ بچہ کس کا بچہ ہے
یہ بچہ کیسا بچہ ہے
جو ریت پہ تنہا بیٹھا ہے
نا اس کے پیٹ میں روٹی ہے
نا اس کے تن پر کپڑا ہے
نا اس کے سر پر ٹوپی ہے
نا اس کے پیر میں جوتا ہے
نا اس کے پاس کھلونوں میں
کوئی بھالو ہے، کوئی گھوڑا ہے
نا اس کا جی بہلانے کو
کوئی لوری ہے، کوئی جھولا ہے
نا اس کی جیب میں دھیلا ہے
نا اس کے ہاتھ میں پیسا ہے
نا اس کے امی ابو ہیں
نا اس کی آپا خالہ ہے
یہ سارے جگ میں تنہا ہے
یہ بچہ کس کا بچہ ہے

یہ بچہ کیسے بیٹھا ہے
یہ بچہ کب سے بیٹھا ہے
یہ بچہ کِیا کچھ پوچھتا ہے
یہ بچہ کیا کچھ کہتا ہے
یہ دنیا کیسی دنیا ہے
یہ دنیا کس کی دنیا ہے

اِس دنیا کے کچھ ٹکڑوں میں
کہیں پھول کھلے کہیں سبزہ ہے
کہیں بادل گِھر گِھر آتے ہیں
کہیں چشمہ ہے، کہیں دریا ہے
کہیں اونچے محل اٹاریاں ہیں
کہیں محفل ہے، کہیں میلا ہے
کہیں کپڑوں کے بازار سجے
یہ ریشم ہے، یہ دیبا ہے
کہیں غلے کے انبار لگے
سب گیہوں دھان مہیا ہے
کہیں دولت کے صندوق بھرے
ہاں تانبا، سونا، روپا ہے
تم جو مانگو سو حاضر ہے
تم جو مانگو سو ملتا ہے
اس بھوک کے دکھ کی دنیا میں
یہ کیسا سکھ کا سپنا ہے؟
یہ کس دھرتی کے ٹکڑے ہیں؟
یہ کس دنیا کا حصہ ہے؟

ہم جس آدم کے بیٹے ہیں
یہ اس آدم کا بیٹا ہے
یہ آدم ایک ہی آدم ہے
وہ گورا ہے یا کالا ہے
یہ دھرتی ایک ہی دھرتی ہے
یہ دنیا ایک ہی دنیا ہے
کچھ پورب پچھم فرق نہیں
اِس دھرتی پر حق سب کا ہے

یہ تنہا بچہ بیچارہ
یہ بچہ جو یہاں بیٹھا ہے
اِس بچے کی کہیں بھوک مِٹے
(کیا مشکل ہے، ہو سکتا ہے)
اِس بچے کو کہیں دُودھ ملے
(ہاں دُودھ یہاں بہتیرا ہے)
اِس بچے کا کوئی تن ڈھانکے
(کیا کپڑوں کا یہاں توڑا ہے؟)
اِس بچے کو کوئی گود میں لے
(انسان جو اب تک زندہ ہے)
پھر دیکھیے کیسا بچہ ہے
یہ کِتنا پیارا بچہ ہے!

ہر چیز سب کا ساجھا ہے

جو بڑھتا ہے، جو اُگتا ہے

وہ دانا ہے، یا میوہ ہے
جو کپڑا ہے، جو کمبل ہے
جو چاندی ہے ، جو سونا ہے
وہ سارا ہے اِس بچے کا
جو تیرا ہے، جو میرا ہے
یہ بچہ کس کا بچہ ہے؟
یہ بچہ سب کا بچہ ہے
rabbnawazkhan
Posts482
Member Since12 Aug 2011
Last Visit11 May 2020
Likes Given112
Likes Received187/121

#20 by rabbnawazkhan » Sat Feb 21, 2015 22:42

Dear diyamughal,
Thanks.
rabbnawazkhan
Posts482
Member Since12 Aug 2011
Last Visit11 May 2020
Likes Given112
Likes Received187/121
Return to 'Urdu' Forum     Return to the forums index
All times displayed are PST - Server Time: Dec 6, 2021 04:21:00 PST